021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
قادیانیوں کا غیر مسلم اقلیت ہونا
77735ایمان وعقائداسلامی فرقوں کابیان

سوال

جناب مفتی صاحب  عرض  یہ ہے کہ قادیانی  پاکستان  میں اقلیت ہے  یانہیں  ؟اگر  ہے تو  ان کے  کیاحقوق  ہیں ؟

o

حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم اللہ تعالی کے آخری نبی ہیں آپ کے بعد   قیامت تک کوئی نیا نبی مبعوث نہیں ہوگا ،  آپ  علیہ  السلام   کواللہ تعالی کا آخری  نبی مان  کرآپ   پر ایمان لانا  ہر مسلمان کے ایمان کاضروری حصہ ہے ۔ لہذاآپ علیہ السلام  کی بعثت کے بعد آپ  کے علاوہ کسی اور شخص کوکسی بھی  عنوان   اور تشریح  کے ساتھ  نبی تسلیم کرنا ایمان کے منافی ہے    ۔ جو شخص  آپ  علیہ السلام  کے بعدکسی اور  کو  نبی مانے  وہ ہر گز  مسلمان  نہیں ہوسکتا۔

قادیانی  ﴿ جواپنے  کو  قادیانی کی بجائے احمدی کہتے ہیں﴾ یہ چونکہ  حضرت  محمد صلی اللہ علیہ وسلم کو اللہ تعالی کا آخری  نبی تسلیم کرنے کی بجائے  مرزا غلام احمد کذّاب  کو نبی مانتے ہیں، اس لئے یہ کافرو مرتد  اوردائرہ اسلام سے خارج ہیں۔

پاکستان کی دستور ساز  اسمبلی نے 1974ء میں باضابطہ  قرار داد کے ذریعہ   قانونی  طور پر قادیانیوں  کو غیر مسلم  اقلیت قرار  دیا ہے ۔ اس کے بعد سے وہ پاکستان  میں  قانونی طور پر  غیر مسلم اقلیت  ہیں ۔ ان کو قانون کے مطابق پاکستان  میں رہنے کا  توحق ہے ، کہ وہ غیرمسلم   اقلیت کےلئے  بنے ہوئے  قانون کی حدود میں اپنی  تجارت   ،زراعت   اورنوکری وغیرہ  کرسکتے ہیں ۔لیکن قادیانیت کا پرچار کرنا   انفرادی  یا اجتماعی  طور پراپنے کو مسلمان ظاہر کرکے مسلمانوں کے کسی  شعارکا  استعمال کرنا ان کےلئے شرعا و قانونا منع ہے۔مثلاپانچ وقت  اذان کہنا ، مسلمانوں  کی طرح  مسجدیں بنانا ، قومی شناختی  کارڈ  اور  پاسپوٹ  میں  مذہب کے خانے  میں  اپنے  کو مسلمان  لکھوانا وغیرہ ان کےلئے  قانونا اس  کی  اجازت نہیں ۔ نیز قادیانی  کافر ہونے کی وجہ سے  مسلمانوں  کے  ساتھ شادی بیاہ  نہیں  کرسکتے۔

         لہذا تمام مسلمانوں کے  اسلامی غیرت اور حمیت کا تقاضایہ ہے کہ قادیانیوں سے میل جول نہ رکھیں ،ان کی شادی بیاہ اور دیگر خوشی اور غمی کی تقریبات  میں شرکت نہ کریں ،ان سے تجارتی لین دین بھی نہ کریں ۔  معاشرتی   کے بائیکاٹ کے ذریعہ  ان کو   قادیانیت  سے توبہ  پر  مجبور کیا  جائے ۔

البتہ علما اور پختہ کار داعیوں  کو تبلیغ کی غرض  سے  ان  سےمیل جول رکھنا چاہئے  ،اوران کے سامنے   دین اسلام  کی حقانیت  کو  واضح کرنا چاہئے۔

حوالہ جات

۔    مَا كَانَ مُحَمَّدٌ أَبَا أَحَدٍ مِنْ رِجَالِكُمْ وَلَكِنْ رَسُولَ اللَّهِ وَخَاتَمَ النَّبِيِّينَ وَكَانَ اللَّهُ بِكُلِّ شَيْءٍ عَلِيمً        ( سورة  الحزاب40)                 
2  ۔دلائل النبوة للبيهقي (7/ 482، بترقيم الشاملة آليا)
وإنه سيكون في أمتي كذابون ثلاثون كلهم يزعم أنه نبي ، وإني خاتم النبيين ، لا نبي بعدي » 
 3۔         الدر المنثور في التفسير بالمأثور (8/ 86)
لَا تَجِدُ قَوْمًا يُؤْمِنُونَ بِاللَّهِ وَالْيَوْمِ الْآخِرِ يُوَادُّونَ مَنْ حَادَّ اللَّهَ وَرَسُولَهُ وَلَوْ كَانُوا آبَاءَهُمْ أَوْ أَبْنَاءَهُمْ أَوْ إِخْوَانَهُمْ أَوْ عَشِيرَتَهُمْ أُولَئِكَ كَتَبَ فِي قُلُوبِهِمُ الْإِيمَانَ وَأَيَّدَهُمْ بِرُوحٍ مِنْهُ وَيُدْخِلُهُمْ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِنْ تَحْتِهَا الْأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُمْ وَرَضُوا عَنْهُ أُولَئِكَ حِزْبُ اللَّهِ أَلَا إِنَّ حِزْبَ اللَّهِ هُمُ الْمُفْلِحُونَ (22)
         4۔            الدر المنثور في التفسير بالمأثور (8/ 87)
                                 وَأخرج أَبُو نعيم فِي الْحِلْية عَن ابْن مَسْعُود رَضِي الله عَنهُ قَالَ: قَالَ رَسُول الله صلى الله عَلَيْهِ وَسلم: أوحى الله إِلَى نَبِي من الْأَنْبِيَاء أَن قل لفُلَان العابد أما زهدك فِي الدُّنْيَا فتعجلت رَاحَة نَفسك وَأما انقطاعك إليّ فتعززت بِي فَمَاذَا عملت فِي مَالِي عَلَيْك قَالَ يَا رب: وَمَالك عليّ قَالَ: هَل واليت لي وليا أَو عاديت لي عدوا
           الدر المنثور في التفسير بالمأثور (8/ 87)
                         وَأخرج الطَّيَالِسِيّ وَابْن أبي شيبَة عَن الْبَراء بن عَازِب قَالَ: قَالَ رَسُول الله صلى الله عَلَيْهِ وَسلم أوثق عرى الإِيمان الْحبّ فِي الله والبغض فِي الله۔          

  احسان اللہ شائق عفا اللہ عنہ    

دارالافتاء جامعة الرشید     کراچی

١۳صفر ١۴۴۴ھ

n

مجیب

احسان اللہ شائق صاحب

مفتیان

سیّد عابد شاہ صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔