021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
پرندوں کو پنجروں میں بند کرنا
71519جائز و ناجائزامور کا بیانجائز و ناجائز کے متفرق مسائل

سوال

کیا پرندے شوقی طور پر پنجرے میں بند کرکے پالنا جائز ہے ؟

o

اگر کوئی شخص  موسم اور پرندوں کے مزاج کے مطابق ان کی  خوارک ،سفائی ستھرائی اورمکمل دیکھ بھال کرسکتا ہے تو ایسے شخص کے لئے اپنے شوق کو پورا کرنے کے لئے پرندوں کو  پنجرےمیں پالنے میں کوئی قباحت  نہیں ہے،شرعاً جائز ہے۔

حوالہ جات

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (6/ 401)
(قوله وأما للاستئناس فمباح) قال في المجتبى رامزا: لا بأس بحبس الطيور والدجاج في بيته، ولكن يعلفها وهو خير من إرسالها في السكك اهـ وفي القنية.
المبسوط (5/ 203)
أن رسول الله أعطى بعض الصبيان بالمدينة طائرا فطار من يديه فجعل يتأسف على ذلك ،ورسول الله صلى الله عليه وسلم يقول يا أبا عمير ما فعل النغير } اسم ذلك الطير ، وهو طير صغير مثل العصفور.

مصطفی جمال

دارالافتاءجامعۃالرشید کراچی

۲۱/۶/۱۴۴۲

n

مجیب

مصطفیٰ جمال بن جمال الدین احمد

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔