021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
نماز جمعہ کی نیت
15933.43نماز کا بیاننماز کی شرائط کا بیان

سوال

نماز جمعہ کی نیت کس طرح کی جائے؟

o

نماز کی نیت کے لیے زبان سے الفاظ ادا کرنا ضروری نہیں۔ اگر کوئی شخص دل میں جمعہ پڑھنے کا ارادہ کرلے تب بھی نماز ہوجائے گی، لیکن اگر کوئی شخص استحضار قلبی کے لیے زبان سے بھی نیت کرنا چاہے تو اس طرح کہے: ’’میں جمعہ کی دو رکعت فرض کی نیت کرتا ہوں‘‘ اس کے بعد ’’اللہ اکبر‘‘ کہے۔ سنتوں میں مطلق سنت کی نیت کرنی چاہیے، ظہر یا جمعہ کی نیت کرنے کی ضرورت نہیں۔

حوالہ جات

الدر المختار شرح تنوير الأبصار وجامع البحار (ص59):
(والمعتبر فيها عمل القلب اللازم للارادة) ‌فلا ‌عبرة ‌للذكر ‌باللسان إن خالف القلب لانه كلام لا نية، إلا إذا عجز عن إحضاره لهموم أصابته فيكيفيه اللسان.
اللباب في شرح الكتاب (1/ 63):
والمعتبر في النية عمل القلب؛ لأنها الإرادة السابقة للعمل اللاحق. ‌فلا ‌عبرة ‌للذكر ‌باللسان. إلا إذا عجز عن إحضار القلب لهموم أصابته فيكفيه اللسان. مجتبى. وعمل القلب أن يعلم بداهة من غير تأمل أي صلاة يصلي، والتلفظ بها مستحب إعانة للقلب.
الدر المختار شرح تنوير الأبصار وجامع البحار (ص59):
وفي المحيط يقول: اللهم إني أريد أن أصلي صلاة كذا فيسرها لي وتقبلها مني.

ناصر خان مندوخیل

دارالافتاء جامعۃ الرشید کراچی

20  رجب 1443 ھ

n

مجیب

ناصر خان بن نذیر خان

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / سعید احمد حسن صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔