021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
نماز کے دوران دل میں چھینک کاجواب دینا
..نماز کا بیاننماز کےمفسدات و مکروھات کا بیان

سوال

حالت نماز میں کسی کی چھینک یاسلام کاجواب دل ہی دل میں دینے سے اوراسی طرح اپنی مادری زبان میں جوباتیں دل میں آتی ہیں یاقصدااپنی مادری زبان میں دوران نماز دل میں کچھ کہنے سے نماز فاسد ہوتی ہے یانہیں ؟

o

دل میں چھینک یاسلام کاجواب دینایادل میں مادری زبان میں کچھ کہنے سے نماز فاسد نہ ہوگی جب تک کہ زبان سے تلفظ نہ ہو،اگرزبان سے تلفظ ہوگیاتونماز فاسد ہوجائے گی ۔

حوالہ جات

"شرح الوقاية لعلي الحنفي" 1 / 355: (و) يفسدها (تشميت عاطس) بأن قال له: يرحمك الله، لأنه يقع في خطاب الناس، فصار ككلامهم. وقد سبق الحديث الدال عليه صريحا. (و) يفسدها (جواب الكلام) سواء كان خبرا أو غيره۔ " رد المحتار " 4 / 436: ( قوله ولو من العاطس لنفسه لا ) أي لو قال لنفسه يرحمك الله يا نفسي لا تفسد لأنه لما لم يكن خطابا لغيره لم يعتبر من كلام الناس كما إذا قال يرحمني الله بحر۔
..

n

مجیب

محمّد بن حضرت استاذ صاحب

مفتیان

سیّد عابد شاہ صاحب / سعید احمد حسن صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔