021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
عدت اسلامی مہینوں کے اعتبارسےہوگی
..القرآنالفاتحہ

سوال

سوال :ایک شخص جوکہ 4شوال کوفوت ہواہے،اس کی بیوی کی عدت کس مہینے کے حساب سے ہوگی؟،یعنی انگریزی مہینےسے یااسلامی مہینےسے؟اورکس مہینے کی کس تاریخ کوعدت مکمل ہوگی؟۔

o

عدت وفات 4مہینے 10 دن اسلامی مہینوں کے اعتبارسےہیں،اگرشوہر پہلی قمری تاریخ کوفوت ہواتوعدت مہینوں کے اعتبارسے ہوگی یعنی 4مہینے 10دن شمارکئے جائیں گے اگرچہ بیچ میں 29 کامہینہ آجائے،اوراگرمہینے کے بیچ میں فوت ہواہوتوپھردنوں کااعتبارہوگا،یعنی فوت ہونے کے بعد 130دن گزرجائیں توعدت پوری ہوجائےگی۔ صورت مسئولہ میں چونکہ مہینے کے درمیان فوت ہواہے تو4شوال سے 130 دن گزرجائیں یعنی 14صفر ہوجائےتوعدت مکمل ہوجائےگی۔

حوالہ جات

ولوطلق امراٴتہ وقت العصرمن اول یوم من الشہروھی من تعتدبالاشہرتعتبر عدتہابالاھلة ومضی بعض الیوم لایوجب تکملة بالایام بخلاف الیوم الثانی والثالث،کذافی الفتاوی الصغری۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔(الھندیة ج 1ص537 ) وفی العلائیة (ثلاثة اشہر)بالاھلة لوفی الغرة ،والافبالایام بحروغیرہ فی الشامیة (قولہ والافبالایام) فی المحیط اذااتفق عدة الطلاق والموت فی غرة الشہراعتبرت الشہوربالاھلة وان نقصت عن العددوان اتفق فی وسط الشہر فعندالامام یعتبر بالایام فتعتد فی الطلاق بتسعین یوماوفی الوفاة بمأة وثلاثین وعندھمایکمل الاول من الاخیرومابینہمابالأھلة ۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔(ردالمحتارج 3ص509)
..

n

مجیب

محمّد بن حضرت استاذ صاحب

مفتیان

فیصل احمد صاحب / سیّد عابد شاہ صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔