021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
کتنےجوڑےحاجت اصلیہ میں داخل ہیں؟
70894قربانی کا بیانوجوب قربانی کانصاب

سوال

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!کیافرماتےہیں علمائےکرام اس مسئلےکےبارےمیں کہ آج کل کتنےجوڑےحاجت اصلیہ میں داخل ہیں؟

 

o

پہننے کےکپڑوں میں حاجت اصلیہ کےلیےجوڑوں کی شرعاکوئی خاص تعدادمقررنہیں،بلکہ گرمی اورسردی کےجتنےجوڑےاستعمال میں ہوں،ویسےزائدپڑےہوئےنہ ہوں تووہ حاجت اصلیہ میں داخل ہوں گے۔

حوالہ جات

"الدر المختار للحصفكي" 2 / 287:
(ولا في ثياب البدن) المحتاج إليها لدفع الحر والبرد، ابن ملك۔
"رد المحتار"6 / 462:
( قوله : وفارغ عن حاجته الأصلية ) أشار إلى أنه معطوف على قوله عن دين ( قوله وفسره ابن ملك ) أي فسر المشغول بالحاجة الأصلية والأولى فسرها ، وذلك حيث قال : وهي ما يدفع الهلاك عن الإنسان تحقيقا كالنفقة ودور السكنى وآلات الحرب والثياب المحتاج إليها لدفع الحر أو البرد۔
"رد المحتار"7 / 238:
 ولو له كسوة الشتاء وهو لا يحتاج إليها في الصيف يحل(ای اخذالصدقۃ لہ)فعلم انہ لیس بذی نصاب بثیاب الشتاء  ۔

محمدبن عبدالرحیم

دارالافتاءجامعۃالرشیدکراچی

13/جمادی الاولی  1442 ھج

n

مجیب

محمّد بن حضرت استاذ صاحب

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / سیّد عابد شاہ صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔