021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
ایک سورۃ بھول کر دوسری پڑھنا
71549نماز کا بیانقراءت کے واجب ہونے اور قراء ت میں غلطی کرنے کا بیان

سوال

ہم ایک بار جماعت میں گئے تو میں نے نماز پڑھائی ۔ میں سورۃ بھول گیا تو سورہ اخلاص پڑھ کر نماز مکمل کی۔ کیا نماز ہو گئی؟

o

فرض نماز کی پہلی دو رکعات میں سورۃ الفاتحۃ اور اس کے بعد کوئی سورۃ یا تین چھوٹی آیات کے بقدر تلاوت واجب ہے۔ سوال میں مذکور صورت میں چونکہ آپ نے اس قدر تلاوت کر لی جتنی  واجب ہے لہذا نماز ادا ہو گئی۔

حوالہ جات

مبحث القراءة (قوله ومنها القراءة) أي قراءة آية من القرآن، وهي فرض عملي في جميع ركعات النفل والوتر وفي ركعتين من الفرض كما سيأتي متنا في باب الوتر والنوافل. وأما تعيين القراءة في الأوليين من الفرض فهو واجب، وقيل سنة لا فرض كما سنحققه في الواجبات، وأما قراءة الفاتحة والسورة أو ثلاث آيات فهي واجبة أيضا كما سيأتي.
(الدر المختار و حاشیۃ ابن عابدین، 1/446، ط: دار الفکر)

محمد اویس پراچہ     

دار الافتاء، جامعۃ الرشید

23/ جمادی الثانیۃ 1442ھ

n

مجیب

محمد اویس پراچہ

مفتیان

سیّد عابد شاہ صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔