021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
دعا میں درود شریف کی مقدارسے متعلق ایک حدیث کی تحقیق
73623ذکر،دعاء اور تعویذات کے مسائلرسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم پر درود وسلام بھیجنے کے مسائل ) درود سلام کے (

سوال

حضرت ابی بن کعب رضی اللہ عنہ سے منسوب ایک روایت کی تحقیق اور تصدیق مطلوب ہے جس میں اوقات دعا میں درود شریف کے لیے کتنا وقت مقدار مقررکیا جائے ؟ اس بارے میں درود شریف کی اہمیت وفضیلت کے پیش نظر   چوتھائی، ،نصف ،دو تہائی اور کل وقت درود شریف کے لیے مختص کرنے کی فضیلت وراد ہوئی ہے، اس حدیث کی تحقیق مطلوب ہے؟

o

یہ حدیث صحیح ہے۔تشریح کے لیے فضائل درود شریف فصل اول حدیث نمبر ۹ کے تحت فوائد ملاحظہ ہوں۔

حوالہ جات

سنن الترمذي ت بشار (4/ 218)
عن الطفيل بن أبي بن كعب، عن أبيه، قال: كان رسول الله صلى الله عليه وسلم إذا ذهب ثلثا الليل قام فقال: يا أيها الناس اذكروا الله اذكروا الله جاءت الراجفة تتبعها الرادفة جاء الموت بما فيه جاء الموت بما فيه، قال أبي: قلت: يا رسول الله إني أكثر الصلاة عليك فكم أجعل لك من صلاتي؟ فقال: ما شئت. قال: قلت: الربع، قال: ما شئت فإن زدت فهو خير لك، قلت: النصف، قال: ما شئت، فإن زدت فهو خير لك، قال: قلت: فالثلثين، قال: ما شئت، فإن زدت فهو خير لك، قلت: أجعل لك صلاتي كلها قال: إذا تكفى همك، ويغفر لك ذنبك.
هذا حديث حسن.

نواب الدین

دار الافتاء جامعۃ الرشید کراچی

یکم ذی الحجہ ۱۴۴۲ھ

n

مجیب

نواب الدین صاحب

مفتیان

محمد حسین خلیل خیل صاحب / سعید احمد حسن صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔