021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
ورثاء میں سے کسی کو Next of kin’’ ‘‘ نامزدکرنا
73581وصیت کا بیانمتفرّق مسائل

سوال

مرحوم کے ورثاء میں ددبیویاں جن سے کوئی اولاد نہیں ہے،تین بھائی،تین بہنیں ہیں۔اور میراث میں جائیداد چھوڑی ہے۔سوال یہ ہے کہ جائیداد میں ایک بیوی کے نام پانچ پانچ مرلے کے دو پلاٹ  کا next of kin nominate کیا ہے،جو کسی ہاؤسنگ سوسائٹی میں ہیں پیپر ساتھ لف ہے۔تقسیم کے دوران ان پلاٹوں کی حیثیت معلوم کرنی ہے۔

o

قانونی لحاظ سے  کسی کو next of kin نامزد کرنے کی حیثیت یہ ہے کہ جس کو نامزد کیا گیاہے وہ نامزد کرنے والے کی جانب سے اس کی پراپرٹی وغیرہ کا محافظ) (Protectorہوتا ہے۔نامزد کرنے والے شخص کی طرف سے نامزد کیے گئے شخص کے حق میں اسے وصیت یا گفٹ  شمار نہیں کیا جاتا۔

لہذا یہ دو پلاٹ اور مرحوم کی تمام تر منقولہ و غیر منقولہ جائیداد تمام ورثہ میں ان کے لئے شریعت میں مقرر کردہ حصوں کے مطابق تقسیم ہو گی۔

حوالہ جات

حاشية السندي على سنن ابن ماجه (2/ 159)
عن أنس بن مالك قال «إني لتحت ناقة رسول الله صلى الله عليه وسلم يسيل علي لعابها فسمعته يقول إن الله قد أعطى كل ذي حق حقه ألا لا وصية لوارث».
 There isn’t any precise law concerning the ‘next of kin’, even though one comes across this term for every bank account opened and property purchased. The ‘next of kin’ has to keep in mind that the property has to be divided amongst all legal heirs, irrespective of whoever the next of kin is, unless foregone. This is essentially because of the lack of any law that recognizes the next of kin and also because all the property left behind by a deceased person is for all legal heirs to inherit, by law.
https://www.zameen.com/blog/your-guide-to-handling-property-if-youre-the-next-of-kin.html.

   محمد عبدالرحمن ناصر

دارالافتا ءجامعۃالرشید کراچی

29/11/1442

n

مجیب

محمد عبدالرحمن ناصر بن شبیر احمد ناصر

مفتیان

محمد حسین خلیل خیل صاحب / سعید احمد حسن صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔