021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
پہلی یاتیسری رکعت میں کتنی دیرقعدہ کرنے سے سجدہ سہوواجب ہوتاہے ؟
..نماز کا بیانسجدہ سہو کابیان

سوال

پہلی یاتیسری رکعت میں غلطی سے قعدہ کیااورالتحیات تک یاالتحیات للہ یااس سے کم وبیش تک التحیات پڑھی تواس صورت میں کس کلمہ کے کس حرف تک پڑھنے پرسجدہ سہوواجب ہوگا،اورکس سے کم پرسجدہ سہوواجب نہ ہوگا؟ o

o

تین بارسبحان ربی الاعلی کی مقداربیٹھنے سے سجدہ سہوواجب ہوگا،اوراس کی مقدار 42 حروف ہیں جوکہ تشہد میں أیہا کی ہ پرپورے ہوتے ہیں، اس لئے اس سے کم پرسجدہ سہوواجب نہیں ہوگا۔۔۔۔۔۔۔

حوالہ جات

۔(احسن الفتاوی 4/ 35 ) "حاشية رد المحتار" 1 / 506: وكذا القعدة في آخر الركعة الاولى أو الثالثة فيجب تركها، ويلزم من فعلها أيضا تأخير القيام إلى الثانية أو الرابعة عن محله، وهذا إذا كانت القعدة طويلة، أما الجلسة الخفيفة التي استحبها الشافعي فتركها غير واجب عندنا، بل هو الافضل كما سيأتي، وهكذا كل زيادة بين فرضين يكون فيها ترك واجب بسبب تلك الزيادة، ويلزم منها ترك واجب آخر وهو تأخير الفرض الثاني عن محله "رد المحتار" 3 / 264: ( قوله قدر أداء ركن ) أي بسنته منية . قال شارحها : وذلك قدر ثلاث تسبيحات ۔ "حاشية رد المحتار" 1 / 497: والتأخير اليسير، وهو ما دون ركن معفو عنه. تأمل۔
..

n

مجیب

محمّد بن حضرت استاذ صاحب

مفتیان

سیّد عابد شاہ صاحب / سعید احمد حسن صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔