021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
آمدنی پرزکوة کاحکم
..زکوة کابیانان چیزوں کا بیان جن میں زکوة لازم ہوتی ہے اور جن میں نہیں ہوتی

سوال

ہم نے کرش پلانٹ کوایک سال چلایاہے،ایک سال کے اندرتقریباتین کروڑآمدنی ہمیں حاصل ہوئی ،جس سے ہم نےدواسکوٹراوردوڈمپرخریدےہیں اوریہ مشینری اسی پلانٹ کے استعمال میں ہے،پوچھنایہ ہےکہ اس مشینری کی زکوة کس طرح اداکریں ،جبکہ اس مشینری پرایک سال گذرچکاہے؟

o

واضح رہےکہ مشینری پرزکوة نہیں ،نیزیہ بھی واضح ہوکہ کاروباریاکمپنی وغیرہ کی اجتماعی آمدن پرزکوة اجتماعی طورپرواجب نہیں ہوتی ،بلکہ ہرشریک کی انفرادی ملکیت پرزکوة کاحساب ہوتاہے،جس کے حساب کاطریقہ یہ ہےکہ وہ جس تاریخ کوبقدرنصاب مال کامالک بناہویاوہ متعین تاریخ معلوم نہ ہونے کی صورت میں جوتاریخ زکوةکاحساب کرنے کے لئے مقررکی گئی تھی اس دن دیکھاجائےگاکہ اس تاریخ تک حاصل ہونے والی آمدنی کی مالیت ساڑھے باون تولہ چاندی کی مالیت کے برابریااس سے زائدتھی تواس ساری آمدنی کے مجموعے کی ڈھائی فیصدزکوة نکالناواجب ہے۔ واضح رہےکہ اگراس زکوة کی تاریخ کے آنے سے پہلے پہلےکاروبارتجارت جیسے ڈمپروغیرہ کی خریداری میں جورقم خرچ ہوگئی ہواس پر زکوة نہیں ہوگی ۔

حوالہ جات

رد المحتار (ج 6 / ص 471): "( ولازکوة في ثياب البدن ) المحتاج إليها لدفع الحر والبرد ابن ملك ( وأثاث المنزل ودور السكنى ونحوها )"
..

n

مجیب

محمد اویس صاحب

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / سیّد عابد شاہ صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔