021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
عورت شادی کے بعد میکے میں قصر کرے یا اتمام
..نماز کا بیانمسافر کی نماز کابیان

سوال

کیا فرماتے ہیں علماء کرام اس مسئلہ کے بارے میں کہ ایک عورت کی شادی کراچی میں ہوئی،یعنی اس کے والدین کا گھر دیر میں ہے اور سسرال کا کراچی میں۔جب وہ عورت اپنے والدین سے ملنے کے لیے آتی ہیں تو کیا پوری نماز پڑھے گی یا قصر کرے گی؟

o

رخصتی کے بعد اقامت و سفر میں عورت خاوند کے تابع ہے۔والدین کا گھر اس کا وطن نہیں رہا۔لہذا اگر پندرہ دن سے کم ٹھہرنا ہوتو قصر کرے۔

حوالہ جات

قال ملک العلماء الکاسانی رحمہ اللہ تعالی:" والمعتبر في النية هو نية الأصل دون التابع ،حتى يصير العبد مسافرا بنية مولاه، والزوجة بنية الزوج، وكل من لزمه طاعة غيره كالسلطان وأمير الجيش؛ لأن حكم التبع حكم الأصل." (بدائع الصنائع:1/94، دار الكتب العلمية) وفی الحلبی الکبیر:"ثم المعتبر فی السفر والاقامۃ نیۃ الأصل دون التبع کالخلیفۃ ،والأمیر مع الجند،والزوج مع زوجتہ." (ص:8 49)
..

n

مجیب

متخصص

مفتیان

ابولبابہ شاہ منصور صاحب / فیصل احمد صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔