021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
اذان کے کلمات چُھوٹنا یا ان میں تقدیم وتاخیر ہونا
73024نماز کا بیاناذان و اقامت کے مسائل

سوال

اگر اذان کہتے ہوئے چند کلمات چُھوٹ جائیں یا آگے پیچھے ہوجائیں تو کیا ایسی اذان درست ہوجائے گی یا اس کا اعادہ ضروری ہے؟

o

کلمات چُھوٹنے کی صورت میں اگر فوراً یاد آجائے تو جو کلمات چُھوٹے ہیں، ان سے دوبارہ شروع کرے اور اگر کوئی بات چیت وغیرہ کے بعد یاد آئے تو پوری اذان دوبارہ کہے۔ کلمات کی ترتیب بدلنے کی صورت میں جس کلمے کو پہلے ہونا چاہیے تھا، صرف اسے دوبارہ کہے۔

حوالہ جات

وقال العلامۃ الحصکفی رحمہ اللہ تعالٰی: ولو قدم فيهما مؤخرا أعاد ما قدم فقط. (ولا يتكلم فيهما) أصلا ولو رد سلام، فإن تكلم استأنفه.
وقال تحتہ العلامۃ ابن عابدین الشامی رحمہ اللہ تعالٰی: قوله: (أعاد ما قدم فقط): كما لو قدم الفلاح على الصلاة يعيده فقط: أي ولا يستأنف الأذان من أوله. قوله: (استأنفه): إلا إذا كان الكلام يسيرا، خانية. (ردالمحتار:389/1)

محمدعبداللہ بن عبدالرشید

دارالافتاء، جامعۃ الرشید ،کراچی

23/شعبان المعظم/ 1442ھ

n

مجیب

محمد عبد اللہ بن عبد الرشید

مفتیان

فیصل احمد صاحب / شہبازعلی صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔