021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
وطن اصلی وطن اقامت سےباطل نہیں ہوتا
74905نماز کا بیانمسافر کی نماز کابیان

سوال

سوال:السلام علیکم  کیافرماتےہیں علماء کرام اس مسئلہ کےبارےمیں

ایک بچہ کامستقل گھر چرمیان میں واقع ہے،اوروہ کوئٹہ میں تعلیم حاصل کرتاہے،ایک دوماہ بعد گھرآتاہے،تین چاردن گزارکےواپس چلاجاتاہے،کوئٹہ سےچرمیان کافاصلہ 48میل سےزیادہ ہے۔

اب سوال یہ ہےکہ لڑکاجب گھرآئےتونماز مسافرانہ اداءکرےیاپوری ،حالانکہ وہ اکثر اوقات کوئٹہ میں رہتاہے۔

اصلی گھراقامت کےگھرسےباطل ہوتاہےیانہیں ؟

 

o

صورت مسئولہ میں بچہ(بشرطیکہ بالغ ہو) جب اپنےگھر چرمیان میں آئےگاتوپوری نمازاداءکرےگا،کیونکہ وطن اصلی وطن اقامت سےباطل نہیں ہوتا۔

حوالہ جات

"رد المحتار " 6 / 21:
( الوطن الأصلي ) هو موطن ولادته أو تأهله أو توطنه ( يبطل بمثله ) إذا لم يبق له بالأول أهل ، فلو بقي لم يبطل بل يتم فيهما ( لا غير و )
"رد المحتار " 6 / 22:
 ( قوله يبطل بمثله ) سواء كان بينهما مسيرة سفر أو لا ، ولا خلاف في ذلك كما في المحيط قهستاني ، وقيد بقوله بمثله لأنه لو انتقل منه قاصدا غيره ثم بدا له أن يتوطن في مكان آخر فمر بالأول أتم لأنه لم يتوطن غيره نهر ۔

محمدبن عبدالرحیم

دارالافتاءجامعۃالرشیدکراچی

07/جمادی الاولی  1443 ھج

n

مجیب

محمّد بن حضرت استاذ صاحب

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / سیّد عابد شاہ صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔