021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
حیض کی حالت میں قرآنِ کریم کی تلاوت کرنا
75019پاکی کے مسائلحیض،نفاس اور استحاضہ کا بیان

سوال

حیض کی حالت میں عورت قرآن  کو چھوئے بغیر زبانی پڑھ سکتی ہے؟

o

خواتین کے لیے ماہوری کے دنوں میں قرآن کریم نہ دیکھ کر پڑھنا جائز ہے اور نہ ہی زبانی پڑھنے کی اجازت ہے۔ البتہ حیض ونفاس کی حالت میں عورت کے لیے ذکر واذکار کرناجائزہے،مثلاً درود پاک،استغفار ، کلمہ طیبہ،یا کوئی اور وظیفہ پڑھنا یا قرآن مجید میں جو دعائیں آئی ہیں ان کو دعا  کی نیت سے پڑھنا درست ہے، البتہ اگر ضرورت ہو تو ایک آیت سے کم کم پڑھا جاسکتا ہے۔

حوالہ جات

عن ابن عمر، عن النبي صلى الله عليه وسلم قال: ‌لا ‌تقرأ ‌الحائض، ولا الجنب شيئا من القرآن. (سنن الترمذي:1/236)
عن ابن عمر، قال: قال رسول الله - صلى الله عليه وسلم -: لا يقرأ الجنب والحائض شيئا من القرآن.(سنن ابن ماجہ:1/376)
سئل الزهرى عن الجنب والنفساء والحائض فقال: لم يرخص لهم أن يقرءوا من القرآن شيئا.(سنن الکبری للبیھقي:2/407)
قال العلامۃابن نجیم رحمۃاللہ علیہ:(قوله: وقراءة القرآن) أي ‌يمنع ‌الحيض قراءة القرآن وكذا الجنابة لقوله - صلى الله عليه وسلم - لا تقرأ الحائض ولا الجنب شيئا من القرآن.
(البحرالرائق:1/209)
ويجوز للجنب والحائض ‌الدعوات ‌وجواب الأذان ونحو ذلك في السراجية.
(الفتاوی الھندیۃ:1/38)
وإذا حاضت المعلمة فينبغي لها أن تعلم الصبيان كلمة كلمة وتقطع بين الكلمتين ولا يكره لها التهجي بالقرآن. (الفتاوی الھندیۃ:1/38)

محمد طلحہ شیخوپوری

دار الافتاء ،جامعۃ الرشید،کراچی

18 جمادی الاولی /1443ھ

n

مجیب

محمد طلحہ بن محمد اسلم شیخوپوری

مفتیان

فیصل احمد صاحب / شہبازعلی صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔