021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
سہرا بندی کرنا
71629جائز و ناجائزامور کا بیانجائز و ناجائز کے متفرق مسائل

سوال

 لڑکے کی شادی پر اس کو سہرا باندھنا جائز ہے یا ناجائزَ؟

 

o

شادی کے موقع پرسنت اور ثواب کی نیت کے بغیرلڑکے کو سہرا باندھنا فی نفسہ جائز ہے۔البتہ جس علاقے میں ایک لازمی رسم بن گیا ہو تو وہاں اجتناب ضروری ہے۔

حوالہ جات

 معارف السنن:(۱۶۰/۴)
والبدعة مالم يکن لها أصل فی الکتاب والسنة والاجماع والقياس،ثمّ ترتکب علی قصد انها
قربة وما لم يقصد بها القربة لا تسمّی بدعة،فالامور الرّائجةفی العرس وحفلات الفرح وعقود
النکاح علی خلاف السنة لا تسمّی بدعة،فانها ليست علی قصد القربة،نعم انها أمور إذا کان
فيها صرف ولغو فتمنع من جهة أخری،وأما العادات الرائجة فی مراسم التعزية ومحافل المآتم
فهی بدعة،لانها تفعل علی قصد انها من الدين.

مصطفی جمال

دارالافتاءجامعۃالرشید کراچی

30/04/1442

n

مجیب

مصطفیٰ جمال بن جمال الدین احمد

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔