021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
مسلمان کوکافریاقادیانی کہنا
75261ایمان وعقائدایمان و عقائد کے متفرق مسائل

سوال

کیافرماتے ہیں مفتیان کرام اس مسئلہ کے بارے میں کہ  کیاکسی ریاست کے حاکم کوکافر،قادیانی اورشیعہ بولناجائزہے جوکہ اپنے خطبہ میں قرآنی آیات پڑھتاہو اوراسی طرح اس کویہودی ایجنٹ کہنا کیساہے،قرآن وحدیث کی روشنی میں جواب مطلوب ہے۔

o

کسی مسلمان کوبغیرکسی  مضبوط شرعی دلیل کے کافریاقادیانی کہناگناہ کبیرہ ہے،بسااوقات کہنے والاخود اس طرح کے جملے بولنے سے کافرہوجاتاہے،حدیث شریف میں ہے: جس شخص نے اپنے مسلمان بھائی کو کافر کہا تو ان دونوں میں سے ایک پر کفر لوٹ گیا یعنی یا تو کہنے والا خود کافر ہوگیا یا وہ شخص جس کو اس نے کافر کہا ہے ،اس لئے  کسی پرکفرکاحکم لگاتے وقت اس حدیث کوپیش نظررکھاجائے۔

حوالہ جات

فی صحيح البخاري (ج 8 / ص 26):
عن أبي هريرة رضي الله عنه أن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال إذا قال الرجل لأخيه يا كافر فقد باء به أحدهما.

۔۔

n

مجیب

محمد اویس صاحب

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔