021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
قبر کی لمبائی وچوڑائی کی حد
70785جنازے کےمسائلجنازے کے متفرق مسائل

سوال

قبر کی لمبائی اور چوڑائی  کی کیا حد ہے ؟اس کی تفصیل بتادیں  مہربانی ہوگی ۔

o

قبرکی  گہرائی  آدمی کے سینے کے برابر ہوناچائیے ، اس کی لمبائی  میت کی لمبائی  کے برابر  ہو اور اس کی  چوڑائی  لمبائی سے آدھی ہو ،اگر لحد ﴿ یعنی  بغلی  قبر ﴾ بنانا  مکمن  ہو  تو  قبر بغلی  بنا نا مسنون ہے

حوالہ جات

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (2/ 234)
(قوله مقدار نصف قامة إلخ) أو إلى حد الصدر، وإن زاد إلى مقدار قامة فهو أحسن كما في الذخيرة، فعلم أن الأدنى نصف القامة والأعلى القامة، وما بينهما شرح المنية، وهذا حد العمق، والمقصود منه المبالغة في منع الرائحة ونبش السباع. وفي القهستاني: وطوله على قدر طول الميت، وعرضه على قدر نصف طوله

             احسان اللہ شائق عفا اللہ عنہ    

       دارالافتاء جامعة الرشید     کراچی

٦ جمادی  الاولی ١۴۴۲ھ

n

مجیب

احسان اللہ شائق صاحب

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / سیّد عابد شاہ صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔