021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
داڑھی اگانے کی نیت سے بلیڈ لگانا
55774جائز و ناجائزامور کا بیانجائز و ناجائز کے متفرق مسائل

سوال

1. چہرے پرداڑھی اگانے کی نیت سے بلیڈ لگانادرست ہے ؟ 2. اگرکچھ حصہ داڑھی کاموجود ہے اورباقی خالی ہے تواس کاحکم ؟

o

1. چہرہ پربالوں کااگناقدرت کی طرف سے ہے ،اپنی اختیاری چیزنہیں ،اگربالکل بال نہ اگیں توبندہ گناہگار نہیں ہوگا ،لہذابال اگانے کے لئے استرہ یابلیڈ چہرےپرپھیرنے کی ضرورت نہیں ،لیکن اگربالکل بال نہ اگیں تو بطورعلاج اگراسترہ پھیرنے سے امید ہوکہ داڑھی آجائے گی تو استراپھیرنے کی گنجائش ہے۔(بحوالہ احسن الفتاوی ج 8ص77) 2. اگرداڑھی کاکچھ حصہ موجودہوتواس پربلیڈ پھیرناناجائزوحرام ہے ،داڑھی کاٹنے کاگناہ ہوگا۔

حوالہ جات

واللہ سبحانہ وتعالی اٴعلم
..

n

مجیب

محمّد بن حضرت استاذ صاحب

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔