021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
پالنے والے پر لے پالک بیٹے کے حقوق ؟
..جائز و ناجائزامور کا بیانجائز و ناجائز کے متفرق مسائل

سوال

کیافرماتے ہیں علماء کرام درج ذیل مسئلہ کے بارے میں کہ منتقل کرنے کے بعد اس بچے کا اصلی ماں، باپ پر کیا حقوق ہونگے؟ دودھ اوردیگراشیاءکے حوالے سے؟

o

وہی جو اپنے جو ایک حقیقی بچے کےاپنے ماں باپ پرہوتے ہیں، لہذ ادودھ پلانا بھی ا نہیں پر واجب ہوگا اورنان ونفقہ بھی، البتہ اگر پالنے والے والدین یہ خرچے تبرعاً اٹھائیں تویہ بھی جائز ہے،تاہم شرعاً ان پر یہ لازم نہیں، حقیقی والدین پر واجب ہیں ۔

حوالہ جات

وفی البحر الرائق شرح كنز الدقائق (4/ 218) (قوله ولطفله الفقير) أي تجب النفقة والسكنى والكسوة لولده الصغير الفقير لقوله تعالى {وعلى المولود له رزقهن وكسوتهن بالمعروف} [البقرة: 233] فهي عبارة في إيجاب نفقة المنكوحات إشارة إلى أن نفقة الأولاد على الأب وأن النسب.
..

n

مجیب

سید حکیم شاہ صاحب

مفتیان

آفتاب احمد صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔