021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
اگرامام لوگوں کوگالیاں دیتاہو،اس کے پیچھے نماز کاحکم
..نماز کا بیانامامت اور جماعت کے احکام

سوال

ایک قاری صاحب جمعہ کوتقریر کررہاتھا،توایک شخص کوئی سوال پوچھنے کے لئے کھڑاہوگیا،توقاری صاحب نے منبر سے اس کاسوال سنے بغیر اسے گالیاں دیناشروع کردیا،توکیا ایسے قاری کے پیچھے نماز پڑھناجائزہے ؟جوگالیاں دیتاہے ،کیونکہ ا س سے پہلے بھی قاری صاحب گالیاں دینے کامرتکب ہواہے ۔ ۲۔مذکورہ بالاقاری صاحب اپنے مقتدیوں کے بارے میں کہتاہے کہ یہ بنی اسرائیل ہیں ،اورمیں ان پرمسلط ہوگیاہوں ،اوربھی اپنے بعض مقتدیوں کے پیچھے طرح طرح کی باتیں کرتاہے توکیااس کے پیچھے نماز پڑھناجائزہے ؟ ۳۔ جوامام کم عمر لڑکوں کے ساتھ پھرتاہو،رات دیرتک ان کے ساتھ گپ شپ مارتاہوتوکیااس امام کے پیچھے نماز جائزہے ؟

o

۔اگرامام کے اندرواقعی یہ خرابیاں ہیں توامام کوسمجھاناچاہئے ،کہ امامت جیسے عظیم مرتبہ والےشخص کے لئے یہ چیزیں بالکل بھی جائزنہیں، امام کوتوایساہوناچاہئے کہ لوگ دیکھ کر مزید دیندارہوں،اورامام کے کسی کام کی وجہ سے لوگ انگلی نہ اٹھاسکیں ،اگروہ سمجھانے کے باوجود بازنہ آئے تومسجد کی انتظامیہ کوشرعااختیارہے کہ وہ صورتحال کاجائزہ لے کر،اگرمناسب سمجھے تواس امام کومعزول کرکے اس کی جگہ کسی دوسرے امام کا بندوبست کریں ،باقی لوگ کہیں اورنماز پڑھناچاہیں توپڑھ سکتے ہیں ،اورجب تک کسی اورامام کابندوبست نہ ہوجائےاگر لوگ اسی امام کےہی پیچھے نماز پڑھیں تواس کی بھی گنجائش ہے۔

حوالہ جات

"مشكاة المصابيح " 3 / 43: وعن عبد الله بن مسعود قال : قال رسول الله صلى الله عليه و سلم : " سباب المسلم فسوق وقتاله كفر " . متفق عليه۔ "مرقاة المفاتيح" 14 / 82: وعن عبد الله بن مسعود رضي الله عنه قال قال رسول الله سباب المسلم بكسر أوله أي شتمه وهو من باب إضافة المصدر إلى مفعوله فسوق لأن شتمه بغير حق حرام قال الأكمل الفسوق لغة الخروج زنة ومعنى وشرعا هو الخروج عن الطاعة وقتاله أي محاربته لأجل الإسلام كفر كذا قاله شارح۔۔۔۔۔ففي النهاية السب الشتم يقال سبه يسبه سبا وسبابا قيل هذا محمول على من سب أو قاتل مسلما من غير تأويل۔ "حاشیۃ علی مختصرالقدوری" / 116 : ویکرہ تقدیم العبد والاعرابی والفاسق الخ۔۔ الفاسق الذی یشرب الخمر ،ویعصی اللہ تعالی ،ویخرج عن طریق العبادۃ ،ویدخل فی طریق المعصیۃ ،وکرہ امامتہم لانہ لایتہم بامر دینہ ،ولأن فی تقدیمہ تقلیل الجماعۃ۔ "ردالمحتارعلی الدرالمختار"1/559 : کرہ امامۃ الفاسق لغۃ خروج عن الاستقامۃ وہو معنی قولہم خروج الشی عن الشیئ علی وجہ الفساد وشرعاخروج عن طاعۃ اللہ بارتکاب کبیرۃ قال القہستانی ای اواصرار علی صغیرۃ (فتجب اھانتہ شرعافلایعظم بتقدیم الامامۃ، تبع فیہ الزیلعی ،ومفادہ کون الکراھۃ فی الفاسق تحریمیۃ۔
..

n

مجیب

محمّد بن حضرت استاذ صاحب

مفتیان

سیّد عابد شاہ صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔