021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
مرنے سے پہلے اپنے لیے قبر بنانا
..جنازے کےمسائلمردوں اور قبر کے حالات کا بیان

سوال

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام اس مسئلہ کے بارے میں کہ مرنے سے پہلے زندگی میں اپنے لیے قبربنانا کیسا ہے؟

o

موت سے پہلے زندگی میں قبر بنانے میں کوئی حرج نہیں۔

حوالہ جات

قال العلامۃ ابن عابدین رحمہ اللہ تعالی:" قوله:( ويحفر قبرا لنفسه) :… أي ولا بأس به. وفي التتارخانية: لا بأس به، ويؤجر عليه، هكذا عمل عمر بن عبد العزيز والربيع بن خيثم وغيرهما. اهـ." (ردالمحتار علی الدرالمختار:3/183،دار المعرفۃ،بیروت) فی الفتاوی الہندیۃ:" ومن حفر قبرا لنفسه ،فلا بأس به، ويؤجر عليه. كذا في التتارخانية." (1/166،دار الفکر،بیروت)
..

n

مجیب

متخصص

مفتیان

ابولبابہ شاہ منصور صاحب / فیصل احمد صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔