021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
طلاق کے لیے گواہ ہونا ضروری نہیں
..طلاق کے احکامطلاق دینے اورطلاق واقع ہونے کا بیان

سوال

زید نے اپنی بیوی کو اس کے سامنے تین بار طلاق دی،اب وہ یہ کہتا ہے کہ یہ طلاق نہیں ہوئی کیونکہ یہ طلاق گواہوں کے سامنے نہیں دی گئی۔

o

طلاق کے لیے گواہوں کی ضرورت نہیں ہے ،بغیر گواہوں کے بھی طلاق ہو جاتی ہے،اس لیے تین طلاق کے بعد اب وہ عورت زید کی بیوی نہیں رہی اور اس کے ساتھ رہنا زید کے لیے حرام ہے۔

حوالہ جات

الهداية في شرح بداية المبتدي (1/ 224) ويقع طلاق كل زوج إذا كان عاقلا بالغا
..

n

مجیب

متخصص

مفتیان

محمد حسین خلیل خیل صاحب / سعید احمد حسن صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔