021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
شادی کے دن ٹوپی نہ پہننے پر بیوی کو طلاق
62861 طلاق کے احکامطلاق کو کسی شرط پر معلق کرنے کا بیان

سوال

میں نے اپنے دوستوں سے کہا ہے کہ میں اگر اپنی شادی کے دن سر پہ ٹوپی نہ پہنوں تو میری بیوی کو طلاق۔۔۔ اب شادی قریب ہے، اب کیا حل ہوسکتا ہے؟ کیا پگڑی (جو شیروانی کے اوپر پہنی جاتی ہے) ٹوپی کے حکم میں ہے؟

o

مذکورہ صورت میں اگر یہ بات کرنے سے پہلے اس خاتون سے آپ کا نکاح نہیں ہوا تھا تو ایسی صورت میں اگر آپ شادی کے دن ٹوپی نہ پہنیں تب بھی آپ کی بیوی کو طلاق نہیں ہوگی۔

حوالہ جات

اللباب في شرح الكتاب (ص: 270) (ولا يصح إضافة الطلاق) أي تعليقه (إلا أن يكون الحالف مالكا) للطلاق حين الحلف، كقوله لمنكوحته: إن دخلت الدار فأنت طالق (أو يضيفه إلى ملك)، كقوله الأجنبية: إن نكحتك فأنت طالق (وإن) لم يكن مالكا للطلاق حين الحلف ولم يضفه إلى ملك بأن (قال لأجنبية: إن دخلت الدار فأنت طالق، ثم تزوجها فدخلت الدار لم تطلق)، لعدم الملك حين الحلف والإضافة إليه، ولابد من واحد منهما الجوهرة النيرة على مختصر القدوري (2/ 39) قوله (ولا يصح إضافة الطلاق إلا أن يكون الحالف مالكا أو يضيفه إلى ملك) فإن قال لأجنبية إن دخلت الدار فأنت طالق ثم تزوجها فدخلت الدار لم تطلق؛ لأنه لم يوقع الطلاق في نكاح ولا أضافه إلى نكاح واللہ سبحانہ و تعالی اعلم
..

n

مجیب

متخصص

مفتیان

سیّد عابد شاہ صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔