021-36880325,0321-2560445

5

ask@almuftionline.com
AlmuftiName
فَسْئَلُوْٓا اَہْلَ الذِّکْرِ اِنْ کُنْتُمْ لاَ تَعْلَمُوْنَ
ALmufti12
اپنی بہن کو زکوٰۃ دینے کا حکم
71714زکوة کابیانمستحقین زکوة کا بیان

سوال

ایک بہن جو شادی شدہ ہے، وہ اپنی غیر شادی شدہ بہن کو زکوٰۃ دے سکتی ہے، جبکہ بہن والد کی کفالت میں ہے، لیکن اس کے پاس خود کوئی نقدی یا سونا چاندی نہیں ہے؟

o

اپنی بہن کو زکوٰۃ دی جاسکتی ہے، بشرطیکہ وہ بہن زکوٰۃ کی مستحق ہو، یعنی وہ مالدار نہ ہو اور سیدہ نہ ہو۔

حوالہ جات

مختصر القدوري (ص: 60)
ولا يجوز دفع الزكاة إلى من يملك نصابا من أي مال كان ويجوز دفعها إلى من يملك أقل من ذلك وإن كان صحيحا مكتسبا.
تبيين الحقائق شرح كنز الدقائق وحاشية الشلبي (1/ 251)
(هي تمليك المال من فقير مسلم غير هاشمي ولا مولاه بشرط قطع المنفعة عن المملك من كل وجه لله تعالى) وقوله: بشرط قطع المنفعة عن المملك من كل وجه احترز به من الدفع إلى فروعه، وإن سفلوا، وإلى أصوله وإن علوا الخ

ناصر خان مندوخیل

دارالافتاء جامعۃالرشید کراچی

2/08/1442 ھ

n

مجیب

ناصر خان بن نذیر خان

مفتیان

سیّد عابد شاہ صاحب / محمد حسین خلیل خیل صاحب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔